Articles and Posts in Urdu
Trending

شوہر کے خراب رویے کی وجہ سے بیوی کے کیئے جانے والےتین بڑے فیصلے

Three major decisions made by the wife due to the bad behavior of the husband

This post ( شوہر کے خراب رویے ) is in two languages i.e Urdu and English. So please select by the given link to read in you desired language.

 پوسٹ کو آپ اردو اور انگش دونوں میں پڑھ سکتے ہیں۔ برائے مہربانی نیچے دیئے گئے لنک سے اپنی پسندیدہ زبان کا انتخاب کریں۔

Read This Post in UrduRead This Post In English

 

 

شوہر کے خراب رویےکی وجہ سے بیوی کے کیئے جانے والےتین بڑے فیصلے

Wife and husband life urdu post
Photo By Anh Nguyen

شوہر کا خراب رویہ دیکھ کر ہر بیوی کے سامنے تین راستے ہوتے ہیں. اور ہر بیوی ان تین راستوں میں سے کوئی ایک راستہ ضرور چُنتی ہے۔ اگر شوہر بیوی کے ساتھ اچھا سلوک نہیں کرتا اور اسے وقت نہیں دیتا۔ موبائل، ٹیلیوژن اور دوستوں میں مصروف رہتا ہے، اسے عزت و پیار نہیں دیتا، ہر وقت جھگڑے کرتا ہے، گالیاں دیتا ہے۔

یاشوہر ماں اوربہن کی باتوں میں آکربیوی کو بے عزت کرتا ہے۔ مطلب کسی بھی اعتبار سے بیوی کو راحت کی بجاۓ تکلیف پہنچاتا ہے، تو ایسے  غلیظ انسان کی بیوی تین فیصلوں میں سے ایک فیصلہ اپناتی ہے۔

شوہرکے خراب رویےکی وجہ سےبیوی کی طرف سے کیا جانے والا پہلافیصلہ

cheating women
Photo by Afif Kusuma on Unsplash

کچھ بیویاں جو ایمان کی کمزور ہوتی ہیں وہ شوہر کے خراب رویہ کو دیکھ کر غیر محرم سے رابطہ بنا لیتی ہیں، پھر اسکے ساتھ اپنے سکھ دکھ شیئر کرنے لگتی ہیں، اور وہ شخص بھی اسکے ساتھ بہت زیادہ ہمدردی سے پیش آتا ہے، ہمدردی والا یہ تعلق دوستی میں تبدیل ہوکر دونوں کو کبیرہ  گناہوں کی طرف لے جاتا ہے، ایسی صورت میں شوہر، بیوی اور اسکا ہمدرد تینوں ہی سخت سزا کی حقدار ٹھہریں گے۔

شوہر  کے خراب رویےکی وجہ سےدوسرا فیصلہ جو بیگمات کر سکتی ہیں

 کچھ بیویاں ایمان کی مظبوط ہوتی ہیں لیکن ہمت کی کمزور ہوتی ہیں، اگر انکا شوہر انکے ساتھ خراب رویہ رکھتا ہے جیسا کہ اوپر لکھ چکا ہوں تو یہ بیویاں اپنی عزت و آبرو کی تو ہر دمہر پل حفاظتکرتی ہیں لیکن اندر سےمکمل ٹوٹ جاتی ہیں۔

girls crying inside urdu posts
Photo by Luis Galvez on Unsplash

  انکا ہنسنا رسمی ہوتا ہے، انکا بولنا رسمی ہوتا ہے، انکی مسکراہٹیں رسمی ہوتی ہیں، انکا لوگوں سے ملنا جلنا رسمی ہوتا یے، یہ دن کی روشنی میں اندر ہی اندر گھٹتی ہیں اور رات کے اندھیروں میں خون کے آنسو روتی ہیں، یہ بیویاں زندہ لاش بن کر اپنی زندگی گذارتی ہیں، اور بروز محشر اس عورت کا شوہر اس وقت تک جنت میں داخل نا ہوسکے گا جب تک بیوی کے ایک ایک آنسو کا حساب نا دیدے۔

ایسی بیویاں جوشوہر کے خراب رویےکی وجہ سے تیسرا فیصلہ کرتی ہیں

 اس راستے پر چلنے والی بیویوں کا ایمان تو مضبوط ہوتا ہی ہے لیکن یہ ہمت اور استقلال کی پہاڑ بھی ثابت ہوتی ہیں۔یہ مایوس نہیں ہوتی اور نہ اندھیروں میں آنسو ں بہاتی ہیں بلکہ فکر کرتی ہیں۔بُرے حالات کو انگلی دکھاتے ہوۓ چیلنج کرتی ہیں اورپختہ عزم و ارادہ کرتی ہیں کہ میں ضرور اپنے شوہر کو اندھیروں سے نکال کر لاؤں گی۔میں انکی خامیوں کو خوبیاں بناؤں گی اور انکی برایئوں کو اپنی اچھایئوں سے ختم کروں گی۔رب تعالی بھی اپنی اس بندی کے عزم اور ارادے پر خوشی سےمسکرا رہے ہوتے ہیں۔

loyal girls in islam post
Photo by Becca Tapert on Unsplash

اپنے مقصد کی تکمیل کی صورت میں یہ شوہر کی گالیاں، طنز و طعنے اور ہر کڑوی بات خاموشی سے برداشت کیۓ مسکراہٹ سے جواب دیتی ہیں، شوہر کی طرف سے بدسلوکیوں پر اپنے اچھے اخلاق اور خوبصورت اعمال کو ہتھیار بناتی ہیں، شوہر کے آنے سے پہلے خود کو سجاۓ محبوبہ بن کر سامنے آتی ہیں کہ شوہر کو سکون و راحت پہنچانا فرض ہے۔

یہ جانتی ہیں کہ شوہر کے والدین کی خدمت فرض نہیں لیکن پھر بھی خود کو ساس سسر میں جھونک دیتی ہیں۔ انکے آگے پیچھے گھومتی ہے، انکی خدمت کو خود کے لیئےشرف سمجھتی ہیں تاکہ بذرگوں کی دعاؤںسے انکا گھر بسا رہے۔ یہ تکیوں میں منہ چھپا کر رونے کی بجاۓ سجدوں میں رونے کو ترجیح دیتی ہیںاور پانچ وقت دعاؤں میں ہاتھ اٹھاۓ آنسو بہا کر رب کے حضور شوہر کی قربت، شوہر کی توجہ، شوہر کا دھیان اورشوہر کی محبت کا سوال کرتی ہیں۔

 

شوہر کا دل بیویوں کی طرف پھیر دیتا ہے

english urdu post about couple life
Photo by Ben White on Unsplash

اتنا ہی نہیں یہ تہجد میں اٹھ کر پھر سے رب کی بارگاہ میں حاضری لگاتی ہیں اور آنکھیں نم کیے اپنی آہ اس رب کے سامنے رکھ کر اپنی خوشیاں مانگتی ہیں۔رب تعالی بھی انہیں انکے صبر ، ہمت ، مدد  اور واسطے پکارنے پر انہیں مایوس نہیں کرتا ۔ بلکہ انکی برداشت کی گئ تکالیف پر صبر کا پھل دیتے ہوئےانکے شوہر کا دل بیویوں کی طرف پھیر دیتا ہے۔ شوہر کا دل بیوی کی محبتوں سے بھر دیتا ہے۔

:نتیجہ

اگر بیوی پہلا راستہ اختیار کرتی ہے تو دنیا میں زلت و رسوائ اور آخرت میں شوہر اور ہمدرد سمیت سخت عذاب کی حقدار ٹھہرے گی۔

بیوی اگر دوسرا راستہ اختیار کرتی ہے تو یہ غلیظ شوہر کی وجہ سے اپنا ہی دل جلاتی ہے اپنا ہی خون جلاتی ہے۔ اپنے آپ کو تکلیف دینے کے سوا کچھ حاصل نہیں ہوتا لیکن اسے اللہ کے یہاں اس صبر اور عزت و آبرو کی حفاظت کا بے تحاشہ اجر ملے گا۔

بیوی اگرتیسرا راستہ اختیار کرتےہوئےہمت اور غور و فکر سے شوہر کی بےغیرتی کو خود کے لیئے چیلنج تصور کرتی ہے ۔ تو ایسے میں 80 فیصد بیویاں اللہ کے حکم سے اپنے مقصد میں کامیاب ہوکر ایک خوشگوار ازدواجی زندگی گزارتی ہیں۔

لہذا بہنوں سے کہوں گا کہ کبھی شوہر کی بے رخی ، بد سلوکی اور برایئوں سے مایوس نا ہونا ۔ بلکہ پختہ عزم و ارادے کے ساتھ اپنے اچھے اخلاق، خوبصورت اعمال اور مددِ باری تعالی کے ذریعے اپنے شوہر کی ان برایئوں کو اچھایئوں میں تبدیل کرنا۔ انشا اللہ  رب تعالی آپ کا مددگار ہوگا۔

 

 

Three major decisions made by the wife due to the bad behavior of the husband

Seeing the bad behavior of the husband, every wife has three paths, and every wife must choose one of these three paths. If the husband does not treat his wife well, does not give her time, is busy with mobile, television and friends, does not give her respect and love, fights all the time, and abuses.

The husband insults his wife in the words of his mother and sister. In any case, he hurts the wife instead of relieving her, so the wife of such a filthy man makes one of three decisions.

The first decision made by the wife

“Some wives who are weak in faith, seeing the bad behavior of their husbands, make contact with a non-mahram, then start sharing their joys and sorrows with him, and that person also treats him with great empathy. This sympathetic relationship turns into friendship and leads both of them to major sins, in which case the husband, wife and his sympathizers will all deserve severe punishment.

The second decisions that wives can make

Some wives are strong in faith but weak in courage. If their husband behaves badly towards them as I have written above, then these wives protect their honor and dignity at every moment but are completely broken from within.

All their laughter is formal, their speech is formal, their smiles are formal, their meeting with people is formal, they subside in the light of day and in the darkness of night they shed tears of blood, these wives. They live their lives as living corpses, and on the Day of Judgment, the husband of this woman will not be able to enter Paradise until he has accounted for every single tear of his wife.

Wives who make the third decision

The faith of the wives who walk this path is strong but it also proves to be a mountain of courage and perseverance. She does not despair and does not shed tears in the dark but worries. Challenges bad situations by pointing fingers. And say I am determined to bring my husband out of the darkness. I will make his faults into virtues and eliminate his vices with my virtues. The ALLAH Almighty is also smiling happily at her commitment and intention.

In fulfillment of her purpose, she quietly endures her husband’s abuse, sarcasm and every bitter thing, responds with a smile, uses her good manners and beautiful deeds as a weapon against abuses by her husband First of all, she prepare herself as a sweetheart and reveals that it is her duty to bring peace and comfort to her husband.

 

Serving her husband’s parents is not her duty

She knows that serving her husband’s parents is not her duty, but she still throws herself at her mother-in-law. She walks back and forth in front of them, considering their service as an honor for herself so that their house may be settled with the prayers of the elders. They prefers to weep in prostrations instead of weeping with her face covered in pillows, and five times she raises her hands in supplication, shedding tears and asking for her husband’s closeness to the Lord, her husband’s attention, her husband’s attention and her husband’s love.

Not only that, they get up in Tahajjud and return to the presence of the Lord again and with their eyes wet, they put their sigh in front of the Lord and ask for their happiness. Does not rather, her husband’s heart turns to his wives, giving her the fruits of patience over the suffering she endured. The heart of the husband is filled with the love of the wife.

Conclusion:

If the wife takes the first path, she will be humiliated in this world and will be punished severely in the Hereafter, including her husband and sympathizers.

If the wife takes the other path, she burns her own heart because of the filthy husband, burns her own blood. He gets nothing but self-harm, but he will be rewarded in the sight of Allah for his patience and protection of his honor and dignity.

If the wife takes the third path and considers her husband’s dishonesty as a challenge to herself with courage and reflection. In such cases, 80% of the wives succeed in their goal by the command of Allah and live a happy married life.

Therefore, I will tell the sisters never to be disappointed with their husband’s apathy, abuse and evils. Rather, with a firm determination to change these evils of her husband into good through her good morals, beautiful deeds and help from the Almighty. God willing, God Almighty will be your helper.

 


Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button